احمد خان بھچر : ریٹائرڈ جج کی سربراہی میں جوڈیشل کمیشن جو بنا رہے ہیں

اپوزیشن لیڈر احمد خان بھچر میڈیا ٹاک پنجاب اسمبلی
0
30

پاکستان ٹوڈے کی تفصیلات کے مطابق ایک ریٹائرڈ جج کی سربراہی میں جوڈیشل کمیشن جو بنا رہے ہیں وہ معاملہ کتنا حساس ہے۔

جوڈیشل کمیشن پہلے موجود ہیں چھ ججوں کے تحفظات عدلیہ آزاد ہو پھر آگے بڑھ سکتے ہیں تو ریٹائر ججز کی سربراہی میں جوڈیشل کمیشن کو مسترد کرتے ہیں، ن لیگ اور حکومت کی بدنیتی کے علاوہ کوئی وجہ نہیں کوئی دوسری شکل دے کر جوڈیشل کمیشن بنایا جائے.

پی ٹی آئی کو دیوار سے لگایا جا رہا ہے اگر ججز بولے تو ان کے ساتھ کھڑے ہوگئے ہیں ، شفاف تحقیقات ہونی چاہیے، مصطفیٰ رند کے کاغذات مسترد کروائے اسے زرداری نے اس لئے اغوا کیا کہ ان کی بیٹی الیکشن لڑ رہی ہے۔

نوازشاہ ان کا گڑھ ہے تو الیکشن لڑنے سے زرداری کیوں گھبراتے ہیں، ایک ویڈیو ایم این اے کی آئی ہے پتنگ اڑاتے ہوئے کیوں انتظار کیاجا رہا ہے شک پر پی ٹی آئی ورکر کوُ گرفتار کرلیتے تو آج انہیں کیوں گرفتار نہیں کیاجارہا، عالیہ حمزہ اور صنم جاوید کے پاس سپیشل آلات تھے جو لاہور اور میانوالی میں بھی واقعہ کیا۔

میانوالی میں مقدمہ میں صنم جاوید کا نام درج کر لیا گیاہے، یہ لوگ تو گھبرائے ہوئے ہیں لوگ پی ٹی آئی کے ساتھ ہیں ساتھ کھڑے رہیں گے، پانی کی بنیاد پر بنیاد زیادہ دیر قائم نہیں رہتی، ایک واقعہ ہوا اس پر ججز نے خدشات کا اظہار کیا اور آزادانہ اظہار نہیں کر سکتے ،ریٹائرڈ ججز کی جوڈیشل کمیشن مذاق ہے ۔

پی ٹی آئی بالکل واضح ہے کہ جوڈیشل کمیشن پہلے ہی موجود ہے فل کورٹ چیف جسٹس کو بنانا چاہیے تھا، شوکت صدیقی کا سپریم کورٹ سے فیصلہ آ گیا ہے موجودہ صورتحال مختلف ہے گھر توڑے جا رہے ہیں۔ کسی ادارے سے کوئی ناراضگی نہیں سب ادارے قابل احترام ہیں ،یہ تین سو یونٹ مفت دیتے کل دوبارہ پانچ روپے بجلی بڑھا رہے ہیں۔

حکومت کے جھوٹوں کی لمبی لائن ہے فارم 47کی حکومت کو بجلی پر پہلے مسئلہ حل کرنُاچاہئیے تھا، تین سو یونٹ غریبوں کے بجائے بجلی کی پانچ روپے بڑھا دی گئی، ٹک ٹاکر فارم 47 کی وزیر اعلیٰ کی کیا کارکردگی ہے عوام بجلی کے بلوں سے مر رہے ہیں

Leave a reply