ایکس بندش کے خلاف صحافی احتشام عباسی کی درخواست پر سماعت

0
13

اسلام آباد:(پاکستان ٹوڈے) اسلام آباد ہائیکورٹ نے وزارت داخلہ کے مجاز افسر کو 3 اپریل کو طلب کر لیا

اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس عامر فاروق نے درخواست پر سماعت کی، پی ٹی اے کی جانب سے تحریری جواب عدالت میں جمع کروا دیا گیا۔ پی ٹی اے وکیل نے لفافہ بند ایک لیٹر عدالت کے سامنے پیش کیا، یہ لیٹر صرف عدالت کے دیکھنے کے لیے ہے۔

اس میں تو کچھ بھی نہیں، چیف جسٹس عامر فاروق کا لیٹر پڑھنے کے بعد ریمارکس، یہ لیٹر درخواست گزار کے وکیل کو بھی دکھا دیں، عدالت کی پی ٹی اے وکیل کو ہدایت یہ پہلے ہی سوشل میڈیا پر موجود ہے، درخواست گزار وکیل سردار مصروف، اس لیٹر کی وجہ سے ایکس پر پابندی لگائی ہے ، نے لیٹر عدالت کے سامنے پیش کیا۔

آپ نے لیٹر دیکھا ہے ؟ چیف جسٹس کا استفسار، میں تو اس لیٹر پر عمل کا پابند ہوں جواب تو انہوں (وزارت داخلہ) نے دینا ہے ، اس میں تو کچھ بھی نہیں ہے ،( چیف جسٹس عامر فاروق)

میں نے اپنے جواب میں کچھ ہسٹری بھی لکھی ہوئی ہے ، وکیل پی ٹی اے 2008 کے رولز بنے ہوئے ہیں ، وکیل پی ٹی اے

اس میں کچھ بھی نہیں ہے ان کو دیکھانا چاہییں تو دیکھا دیں ، جینوئن وجوہات ہونی چاہیں اسٹیٹ سیکورٹی یا نیشنل سیکورٹی کا معاملہ ہو تو صورتحال مختلف ہے ، یہ (ایکس) رائے کے اظہار کا پلیٹ فارم ہے ، چیف جسٹس عامر فاروق

اس لیٹر میں تو کچھ بھی نہیں ہے ، یہ پٹیشن بہت ساروں کی نمائندگی کرتی ہے جو ٹوئٹر استعمال کرتے ہیں، چیف جسٹس یہاں تک ٹھیک کہ آپ ریگولیٹری اتھارٹی ہیں آپ یہ کرنے کے پابند ہیں ، وزارت داخلہ میں سے کسی کو بلا کر پوچھ لیتے ہیں ، کیس کی سماعت 3 اپریل تک ملتوی

Leave a reply