گلوکار امجد پرویز 79 برس کی عمر میں انتقال کر گئے

0
54

پاکستان ٹوڈے‘ معروف گلوکار ڈاکٹر امجد پرویز 79 سال کی عمر میں لاہور میں انتقال کر گئے۔

نیوز لائبریری : امجد پرویز کافی عرصے سے گردوں کے عارضے میں مبتلا تھے اور نجی ہسپتال میں زیر علاج تھے۔

گلوکار کی نماز جنازہ آج (4 فروری کو) بعد نماز ظہر شادمان مین بلیوارڈ مسجد نزد ان کی رہائش گاہ میں ادا کی جائے گی۔

امجد پرویز نے 1970 کی دہائی میں ایک پاپ بینڈ میں شمولیت اختیار کی تھی جسے The AayJays کے نام سے جانا جاتا تھا، ان کے مشہور گانوں میں ’تیرا لوٹا شہر بھمبور‘ اور ’جو بھی کچھ ہے محبت کا پھلاؤ ہے‘ شامل تھے۔

وہ موسیقی پر 8 کتابوں کے مصنف تھے جن میں میلوڈی میکرز آف برصغیر، سمفنی آف ریفلیکشنز اور رینبو آف ریفلیکشنز شامل ہیں، انہیں اپنی زندگی میں سنہ 2000 میں پرائیڈ آف پرفارمنس ایوارڈ سے بھی نوازا گیا۔

امجد پرویز کا ابتدائی سفر
امجد پرویز پیشے کے لحاظ سے انجینئر تھے اور پی ایچ ڈی کی تعلیم حاصل کی، وہ 1945 میں فلیمنگ روڈ لاہور میں پیدا ہوئے، ان کے والد اسلامیہ کالج میں کیمسٹری کے پروفیسر تھے جہاں ان کے نانا نے بھی تقسیم ہند سے قبل بطور پرنسپل خدمات انجام دی تھیں۔

انہوں نے سنٹرل ماڈل اسکول سے 1960 میں میٹرک کیا، گورنمنٹ کالج لاہور سے انٹرمیڈیٹ کیا اور 1967 میں یو ای ٹی سے مکینیکل انجینئرنگ میں گریجویشن مکمل کیا، برمنگھم یونیورسٹی سے پی ایچ ڈی کی تعلیم حاصل کی۔

امجد پرویز نے 1954 میں بطور چائلڈ آرٹسٹ ریڈیو پاکستان لاہور اسٹیشن سے گلوکاری کے سفر کا آغاز کیا بعد ازاں انہوں نے استاد سلامت علی اور دیگر سے گائیکی کی تربیت حاصل کی۔

 

Leave a reply