بانی پی ٹی ائی کے اڈیالہ جیل میں میڈیا سے بات چیت

0
16

پاکستان ٹوڈے: چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ سے کہنا چاہتا ہوں کہ پی ٹی ائی کی 25 مئی کی پٹیشن کو سنا جائے، نو مئی واقعات کی تحقیقات کے لیے جوڈیشل کمیشن بنایا جائے، نو مئی واقعات پر اب تک کوئی انکوائری نہیں ہوئی

چیف جسٹس قاضی فائز عیسی سی سی ٹی وی فٹیجز کو ریکور کرنے کا حکم دیں

جنہوں نے سی سی ٹی وی فٹیجز چوری کی وہی نو مئی کے ذمہ دار ہیں، کرائم کی انفارمیشن چھپانا بھی جرم ہے۔

نو مئی کی بنیاد پر ایک سیاسی جماعت کو ختم کیا جا رہا ہے، یہ سب کچھ لندن پلان کے تحت چل رہا ہے، نواز شریف اس کے بیٹوں مریم نواز اور زرداری کے کیسز کو ختم کر دیا گیا۔

نواز شریف نے توشہ خانہ سے چھ لاکھ میں مرسیڈیز گاڑی لی، زرداری نے توشہ خانہ سے تین گاڑیاں لی جو کہ قانونی طور پر نہیں لی جا سکتی۔

کرپشن کی کتابوں والوں کو کلیئر کیا جا رہا ہے

اج انصاف نہیں ہے جس کی لاٹھی اس کی بھینس والی صورتحال ہے

8 فروری پر بھی جوڈیشل انکوائری کروائی جائے

دھاندلی زدہ الیکشن کے باعث صدر زرداری اور سینٹ الیکشن کی کوئی قانونی حیثیت نہیں

انتخابات میں اکثریت کو اقلیت میں بدل دیا گیا، مجھے جیل میں رکھنا ہے تو رکھیں مگر باقی لوگوں کو رہا کر دیا جائے

الیکشن کمیشن جس نے دھاندھلی کروائی وہ کیسے انکوائری کر سکتا ہے، جیسے اسرائیل دہشت گردی کرکے فلسطین پر الزام لگا دیتا ہے، ایسے ہی نو مئی کا واقعہ کرکے ہم پر الزام لگا دیا گیا ،اسد مجید نے افیشل میٹنگ پر سائفر بھیجا تھا۔

ڈونلڈ لو اگر رجیم چینج کو تسلیم کر لیتا تو اس کا دباؤ پوری جو بائیڈن حکومت پر اتا

نیشنل سیکیورٹی کمیٹی کی میٹنگ میں اسد مجید نے دھمکی کا بتایا، ڈونلڈ لو تسلیم کر لیتا تو بائیڈن حکومت ہل جاتی

ڈونلڈ لو کے بیان پر دوبارہ انکوائری کروائی جائے، امریکی سفیر مجھے ملنے جیل نہیں آئے جب ملاقات ہو گی تو ڈونلڈ لو کے بیان اور پاکستان میں امریکی سفارتخانہ کے کردار پر بات کروں گا۔

اصل سائفر دفتر خارجہ میں موجود ہے، ہمیں سائفر کی پیرافریز کاپی دی گئی تھی۔

سائفر گم ہوا تو وزیراعظم اپنے افس کا چوکیدار نہیں ہوتا بلکہ وزیراعظم افس کے کچھ سیکیورٹی پروٹوکولز ہوتے ہیں، سائفر سے پاکستان متاثر ہوا کیوں اس پر انکوائری نہیں ہوئی۔

حکومت گرانے کے بینیفیشری حکومت میں بیٹھ گئے تو انکوائری کیسے ہوگی، ایک ٹی وی اینکر نے پہلے ہی بتا دیا تھا کہ مجھے پانچ فروری تک سزائیں دے دی جائیں گی، مجھے پانچ دن میں تین سزائیں سنائی گئی۔

میں تو چاہتا تھا کہ میرے کیسز کی سماعت براہ راست نشر کی جائے، عمر ایوب کو قائد حزب اختلاف اور شیر افضل مروت کو پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا چیئرمین نامزد کیا ہے۔

ہم نے تو نامزد کر دیا ہے اب اس پر نوٹیفکیشن سپیکر نے جاری کرنے ہیں، رانا ثنا اللہ کے بیان پر یہی کہنا چاہوں گا کہ مافیاز ایسا ہی کرتے ہیں، ہم 8 فروری والے ہیں سیاسی طور پر مقابلہ کرتے ہیں اور یہ مخالفین کا خاتمہ کرتے ہیں

پنجاب میں 40 ایم پی ایز کے فارورڈ بلاک سے متعلق علم نہیں، مجھے پنجاب کے پارلیمانی لیڈر سے ملاقات کی اجازت نہیں دی گئی، کوشش کروں گا کل پنجاب کے پارلیمانی لیڈر سے ملاقات کرکے تمام معلومات حاصل کروں۔

Leave a reply