ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ: بھارت نے پاکستان کو 6 رنز سے شکست دے دی

0
12

آئی سی سی مینز ٹی 20 ورلڈ کپ کے سب سے بڑے ٹاکرے میں بھارت نے پاکستان کو 6 رنز سے شکست دے دی۔

امریکا کے شہر نیویارک کے نساؤ کاؤنٹی گراؤنڈ میں ہونے والے ٹی20 ورلڈکپ کے 19ویں میچ میں روایتی حریف پاکستان اور بھارت مدمقابل ہوئے۔

بھارت نے پاکستان کو جیت کیلئے 120 رنز کا ہدف دیا، ہدف کے تعاقب میں پاکستانی ٹیم 7 وکٹوں کے نقصان پر مقررہ اوورز میں 113 رنز بناسکی۔

پاکستان نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کی دعوت دی تو بھارت کی بیٹنگ لائن بری طرح لڑکھڑا گئی اور پوری ٹیم 19 اوور میں 119 رنز پر ڈھیر ہوگئی۔

ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنلز میں ایسا پہلی مرتبہ ہوا ہے کہ پاکستان کے خلاف بھارتی ٹیم آل آوٹ ہوئی۔

علاوہ ازیں یہ ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنلز میں پاکستان کے خلاف بھارت کا کم ترین اسکور ہے، اس سے قبل بھارت کا کم ترین اسکور 2012 میں 9 وکٹ پر 133 رنز تھا۔

اننگز کے آغاز میں بھارت کپتان روہت شرما اور ویرات کوہلی کریز پر آئے اور پہلے اوور میں 8 رنز بنائے، پاکستان کی جانب سے فاسٹ باؤلر شاہین آفریدی باؤلنگ کروائی، تاہم پہلا اوور مکمل ہوتے ہی بارش ایک بار پھر شروع ہوگئی اور کھلاڑی میدان سے باہر چلے گئے۔
بعدازاں بارش تھمنے کے بعد 9 بجے بھارت نے دوبارہ بیٹنگ شروع کی، دوسرے اوور میں نسیم شاہ کی بال پر ویرات کوہلی 12 رنز کے مجموعی اسکور پر وکٹ گنوا بیٹھے اور 4 رنز بنا کر کیچ آؤٹ ہوگئے۔

بھارت کی دوسری وکٹ 19 رنز پر گری، حارث رؤف کی گیند پر روہت شرما 12 گیندوں پر 13 رنز بناکر کیچ آؤٹ گئے۔ بھارت نے تیسری وکٹ 58 رنز پر گنوائی، اکثر پٹیل 18 گیندوں پر 20 رنز بنا کر نسیم شاہ کی بال پر آؤٹ ہوگئے۔

بھارت کی چوتھی وکٹ 89 رنز پر گری، حارث رؤف کی گیند پر سوریاکماریادیو 8گیندوں پر 7 رنز بناکر کیچ آؤٹ گئے۔ بھارت کی پانچویں وکٹ95 رنز پرگری جب شیوام ڈوبے 3 رنز بناکر نسیم شاہ کا تیسرا شکار بنے۔

اننگز کے آغاز میں بھارت کپتان روہت شرما اور ویرات کوہلی کریز پر آئے اور پہلے اوور میں 8 رنز بنائے، پاکستان کی جانب سے فاسٹ باؤلر شاہین آفریدی باؤلنگ کروائی، تاہم پہلا اوور مکمل ہوتے ہی بارش ایک بار پھر شروع ہوگئی اور کھلاڑی میدان سے باہر چلے گئے۔
بعدازاں بارش تھمنے کے بعد 9 بجے بھارت نے دوبارہ بیٹنگ شروع کی، دوسرے اوور میں نسیم شاہ کی بال پر ویرات کوہلی 12 رنز کے مجموعی اسکور پر وکٹ گنوا بیٹھے اور 4 رنز بنا کر کیچ آؤٹ ہوگئے۔

بھارت کی دوسری وکٹ 19 رنز پر گری، حارث رؤف کی گیند پر روہت شرما 12 گیندوں پر 13 رنز بناکر کیچ آؤٹ گئے۔

بھارت نے تیسری وکٹ 58 رنز پر گنوائی، اکثر پٹیل 18 گیندوں پر 20 رنز بنا کر نسیم شاہ کی بال پر آؤٹ ہوگئے۔

بھارت کی چوتھی وکٹ 89 رنز پر گری، حارث رؤف کی گیند پر سوریاکماریادیو 8گیندوں پر 7 رنز بناکر کیچ آؤٹ گئے۔

بھارت کی پانچویں وکٹ95 رنز پرگری جب شیوام ڈوبے 3 رنز بناکر نسیم شاہ کا تیسرا شکار بنے۔

بھارت کے خلاف پاکستان کی پہلی وکٹ 26 رنز پر گری جب کپتان بابراعظم 13 رنز بنا کر کیچ آؤٹ ہوگئے۔ پاکستان کی دوسری وکٹ 57 رنز پرگری، عثمان خان 15 گیندوں پر 13 رنز بنا کر آؤٹ ہوگئے۔

پاکستان کی تیسری وکٹ 73 رنز پرگری، فخر زمان 13 رنز بنا کر کیچ آؤٹ ہوئے۔ پاکستان کی چوتھی وکٹ 80 رنز پرگری جب سیٹ بلے باز محمد رضوان 31 رنز بناکر آؤٹ ہوئے۔

آؤٹ ہونے والے پانچویں کھلاڑی شاداب خان تھے جو 88 کے مجموعی اسکور پر 4 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔عماد وسیم 23 گیندوں پر 15 رنز بنا کر آؤٹ ہوگئے جبکہ افتخار احمد 9 گیندوں پر رنز بنا کر پوویلین لوٹ گئے۔

ان کے بعد نسیم شاہ اور شاہین آفریدی میدان میں آئے تاہم اُس وقت تک پاکستان کے لیے ہدف حاصل کرنا تقریباً ناممکن ہوچکا تھا۔

آخری اوور میں نسیم شاہ نے 2 چوکے لگائے لیکن وہ بھی پاکستان کو فتح سے ہمکنار نہ کرا سکے اور پاکستانی ٹیم مقررہ اوورز میں 7 وکٹوں کے نقصان پر 113 رنز ہی بنا سکی۔

بھارت کی جانب سے جسپریت بھمرا نے 4 اوورز میں 14 رنز کے عوض 3 وکٹیں حاصل کیں، ہارڈیک پانڈیا نے 2 کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔ ارشدیپ سنگھ اور اکسر پٹیل نے ایک، ایک وکٹ حاصل کی، جسپریت بمرا شاندار باؤلنگ پر پلیئر آف دی میچ قرار پائے۔

ان کے علاوہ ہاردک پانڈیا نے 2 کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا، ارشدیپ سنگھ اور اکثر پٹیل نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔

اس سے قبل ٹاس کے بعد قومی ٹیم کےکپتان بابر اعظم کا کہنا تھا کہ میچ میں بہترین پرفارم کرنےکی کوشش کریں گے، ماضی ماضی ہے آج کے میچ پر فوکس ہے، بھارت کے خلاف میچ کے لیے بہت حوصلہ ملتا ہے۔

قومی ٹیم میں ایک تبدیلی کی گئی اور اعظم خان کی جگہ عماد وسیم کو شامل کیا گیا۔ پاکستان کرکٹ ٹیم کی قیادت بابراعظم کررہے تھے، دیگر کھلاڑیوں میں محمد رضوان، عثمان خان، شاداب خان، فخرزمان ، افتخاراحمد، عماد وسیم ، محمد عامر، نسیم شاہ شاہین شاہ آفریدی اور حارث رؤف شامل تھے۔

ھارتی کپتان روہت شرما نے کہا کہ اچھا اسکور کرنے کی کوشش کریں گے تاکہ بولرز دفاع کر سکیں، یہاں دو تین میچز کھیل چکے ہیں، اندازہ ہے یہاں کتنا اسکور ہونا چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے کنڈیشنز کا زیادہ سے زیادہ جائزہ لینے کی کوشش کی ہے، ہر میچ اہم ہوتا ہے، کچھ بھی ہو سکتا ہے، یہ بہت ہی دلچسپ ٹورنامنٹ ہے۔

بھارت کے خلاف میچ میں پاکستان نے اپنی ٹیم میں ایک تبدیلی کی ہے اور اعظم خان کی جگہ آل راؤنڈر عماد وسیم کو شامل کیا گیا ہے، جبکہ بھارت نے ٹیم میں کوئی تبدیلی نہیں کی ہے۔

Leave a reply