بانی پی ٹی آئی سے جیل میں پرائیویسی میں ملاقات یا ویڈیو لنک کے ذریعے ملاقات کی درخواست

0
28

لاہور:(پاکستان ٹوڈے) شیرافضل مروت کی جیل رولز کی شِق 265 کو چیلنج کرنے کی درخواست، جسٹس سردار اعجاز اسحاق خان نے درخواستوں پر سماعت کی۔

عدالتی معاون زینب جنجوعہ ایڈووکیٹ عدالت کے روبرو پیش ہوئیں، شیر افضل مروت ایڈوکیٹ عدالت پیش نہیں ہوئے ، معاون وکیل پیش ہوئے، سپرینڈینٹ اڈیالہ جیل اسد وڑائچ، نےبانی پی ٹی آئی سے ملاقاتوں کی رپورٹ عدالت جمع کروا دی ،ہم نے مشاورت سے ایس او پیز تیار کرلی ہیں ، آپ کو ہمارے رسپانس کو تعریف کرنی چاہیے ، آپ یہ کام پہلے بھی کر سکتے تھے ، جسٹس سردار اعجاز اسحاق

ہم نے دو دن میں ایس او پیز فائنل کرلیے ہیں ،جیل رولز کے حوالے سے پنجاب حکومت میں شق 265 کی مختلف تعریف ہے، ویب سائٹ پر جیل میں ہفتے میں دو بار ملاقات کی اجازت نہیں دی گئی،جیل رولز کی کتاب میں دو بار ملاقات کی اجازت ہے، ایڈوکیٹ زینب جنجوعہ

جیل رولز کے حوالے سے دو تین کتابیں ہیں جن کے مصنف مختلف ہیں، پنجاب حکومت سے بات کرکے ایک متفقہ رولز کو فائنل کروا دیتے۔ ویب سائٹ پر سپیریئر کلاس قیدیوں کے لیے جو ایس او پیز دی گئی ہیں ان کے مطابق ہفتے میں ایک بار ملاقات کا بتایا گیا یے۔

آن لائن رولز میں لکھا ہوا کہ کوئی بھی سیاسی گفتگو نہیں کی جاسکتی ہے ، ویب سائٹ رولز کے مطابق چھ افراد کی ملاقات ہوسکتی ہے ، جیل رولز کتاب کے مطابق ہفتے میں دو ملاقاتیں کی جاسکتی ہیں ۔

سمجھ نہیں آرہی کہ آن لائن میٹنگ کی مخالفت کیوں کی جارہی ہے، رولز میں ایک لائن لکھی ہوئی آپ اس کے پیچھے لگے ہوئے کہ ہم نے یہ نہیں کرنا ، ایک گھنٹے میں اس لائن کو ٹھیک کیا جاسکتا ہے۔

عدالت میں 26 اور 28 مارچ کو بانی پی ٹی آئی سے ملاقات کی رپورٹ جمع کرا دی گئی ، پٹیشنز مطمئین ہیں ، بانی پی ٹی سے ملاقات کرانے کی درخواست نمٹا دیتے ہیں ۔

عدالت نے بانی پی ٹی آئی کی وکلا سے ملاقات کی درخواست نمٹا دی

عدالتی معاون زینب جنجوعہ نے جیل رولز کے حوالے سے مختلف بھارتی عدالتوں کی ججمنٹس عدالت میں پیش کیں ، بھارتی ججمنٹس میں جیل میں سیاسی گفتگو کی اجازت دی گئی ہے ، عدالت نے کیس کی سماعت پانچ اپریل تک ملتوی کردی۔

Leave a reply